stitching cost 126

درزیوں کے لیے کپڑوں کی سلائی کے سرکاری نرخ مقرر

سرکاری حکم کے تحت درزیوں کو مردانہ شلوار قمیض کی سلائی 650 روپے وصول کرنے کی ہدایت

رحیم یار خان درزیوں کے لیے کپڑوں کی سلائی کے سرکاری نرخ مقرر کر دئیے گئے، مردانہ شلوار قمیض کی سلائی 650 روپے وصول کرنے کی ہدایت کی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کے بیشتر شہروں میں عید سے قبل درزی کپڑوں کی سلائی کے پیسے بڑھا دیتے ہیں اور منہ مانگے پسے وصول کرتے ہیں۔شہری چونکہ رمضان میں بھی بہت زیادہ خرچ کر چکے ہوتے ہیں اس لیے عید پر مزید اخرجات برداشت کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔

تاہم اب میڈیا رپورٹس کے مطابق پنجاب کے ضلع رحیم یار خان کی اناتظامیہ نے عید سے قبل درزیوں کے لیے مردانہ کپڑوں کی سلائی کے نرخ مقرر کر دئیے ہیں اور اس حکم کے خلاف ورزی پر سخت کاروائی کا اعلان بھی کیا ہے۔رحیم یار خان کی ضلعی انتظامیہ نے ایک سرکاری حکم کے تحت درزیوں کو مردانہ شلوار قمیض کی سلائی 650 روپے وصول کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان کے دفتر سے جاری کردہ نوٹفیکیشن میں کہا گیا ہے کہ زیادہ سلائی وصول کرنے والے ٹیلر ماسٹرز کے خلاف سخت کاروائی ہو گی۔

جب کہ ایک اور میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ضلع انتظامیہ بنوں نے درزیوں کے ساتھ میٹنگ کے بعد فی جوڑا سلائی 500روپے نرخ مقرر کی ہے‘ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق بنوں کے ٹیلرز ایسوسی ایشن کیساتھ میٹنگ کے بعد متفقہ طورپر فی جوڑا سلائی 500روپے مقرر کی گئی ہے‘ تمام درزیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اس فیصلے کی پاسداری کرتے ہوئے 500روپے سے زائد وصول نہ کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں