کامیاب کاروبا ر کے 25ا ہم نکات 150

کامیاب کاروبا ر کے 25ا ہم نکات

ذیل میں‌چند ایسی خصوصیات اور ٹپس بتائی جارہی ہیں‌کہ جن پر عمل کرکے آپ ایک اچھے بزنس مین بن سکتے ہیں . حسب روایت محنت شرط ہے.
1:تجربہ کاروں‌کے تجربہ سے فائدہ اٹھانا:
اگر آپ نیا کاروبار شروع کر رہے ہیں یا آپ بلکل نئے بزنس سیکٹر میں جا رہے ہیں تو آپ ایسا کریں کہ کسی ایسے شخص کو تلاش کریں جو پپہلے سے وہ کام کرتا ہے آپ اس شخص کے ساتھ تقریبا 3سے 6 ماہ تک کا عرصہ گزاریں اور اس سے سیکھیں .تاکہ آپ کو اُس بزنس کے اہم اتار چڑھائو کا علم ہو . ایسا کرنے سے آپ اس کاروبار کے بارے میں‌یہ بات بخوبی جان جائیں گے کہ اس کاروبار کو کس طرح سے چلانا ہے اور کس طرح سے اس کاروبار میں ترقی کی منازل طے کی جاستکتی ہیں‌. اور جب آپ خود کا علیحدہ سے کاروبار شروع کریں گے تو آپ کو کسی قسم کی کوئی پریشان لاحق نہیں‌ہوگی.

2: اپنی شخصیت میں‌لچک پیدا کریں:
اکثر ایسے منیجرز جن کا تجربہ نہیں‌ہوتا ان کا ایک یہ بھی مسئلہ ہوتا ہے کہ وہ ہر وقت اپنے آپ کو دُرست سمجھتے ہیں، شائید اس لیے کیونکہ وہ نئے مینجر بنے ہوتے ہیں اور کام کا تجربہ نہیں‌ہوتا۔ میری ذاتی رائے کے مطابق، ۹۰ فیصد جو مسئلے ہوتے ہیں وہ مس مینجمنٹ کی وجہ سے ہوتے ہیں۔نئے منیجرز خود کو ایک باکمال اور مکمل شخصیت تصور کرتے ہیں اور اپنی ذہنیت کے اور ناتجربہ کاری کی بناپر جوہ فیصلہ کرلیتے ہیں‌ان پر ڈٹ جاتے ہیں . حالانکہ ہونا یوں‌چاہئے کہ اگر اپنے کسی فیصلہ کو آپ بعد میں خیال کریں کہ یہ میں‌نے غلط کیا تھا تو فوری اس سے رجوع کرلیں‌اور کاروبار کو صحیح سمت پر لے آئیں .!

3: اپنی ساری جمع پونجی ایک ہی جگہ نہ لگائیں:
کاروبار چاہے جیسا بھی ہو،اور اس میں‌منافع کا تناسب جو بھی ہو، آپ ہر گز اپنی ساری کمائی اُس میں انویسٹ نہ کریں کیونکہ پہلی بات تو یہ ہے کہ آپ کا سارا انحصار اسی کاروبار پر ہوجائے گااور دوسرا یہ کہ ہر کاروبار میں اتار چڑھائو آتاہی رہتا ہے اور جب اپنا سارا پیسا اُس ایک کاروبار میں ڈالیں گے تو مندی کے دنوں میں نہ صرف آپ زیادہ نقصان کریں گے بلکہ اُس کے ساتھ ساتھ آپ کے پاس کچھ ہوگا بھی نہیں کہ اُن دنوں میں کہ آپ اُن سخت حالات کا مقابلہ کریں۔تو اس لئے بہتر یہی ہے کہ اپنے جمع شدہ پیسے کو مختلف کاروبار میں‌لگائیں اور مختلف طریقوں مثلا سونا ،چاندی یا دیگر ایسی اشیاجن کا سٹاک کیا جاسکتا ہوں ان پر انویسٹ کریں تاکہ آپ کو اگر ایک کاروبار سے نقصان بھی ہو رہو تو آپ دوسرے سے فائدہ اٹھا سکیں اور اپنی کاروباری ساکھ کو برقرار رکھ سکیں‌.

4: تمام کام خود ہی کرنے سےاجتناب کریں :
یہ آپکی شخصیت پر انحصار کرتا ہے کہ ہوسکتا ہے آُ مختلف قسم کے بہت سارے کام مثلا ہیومن ریسورس، مارکیٹنگ ، اکائونٹس وغیرہ کے کام کرنا جانتے ہوں . لیکن ایسا ہر گز نہ کریں کہ سارے خود ہی کرنے لگ جائیں . کیونکہ ہوسکتا ہے کہ شروع میں تو آپ ایسا کرلیں مگر آہستہ آہستہ آپ تھک جائیں گے اور کاروبار سے آپ کی تندہی اور توجہ کم ہوجائےگی.

5:اپنے ملازمین کے ساتھ اچھابرتائو کریں:
یہ پہلو کاروبار کےلئے نہایت اہم ہوتا ہے . کہ ایسے افراد جو آپ کی ٹیم میں‌شامل ہیں ان کو اپنی توجہ کا مرکز رکھیں .کبھی ان سے نذریں نہ چرائیں .کیونکہ یہی وہ لوگ ہیں‌جن کی بدولت آپ اپنے کاروبار کو مزید ترقی بھی دے سکتے ہیں اور اپنے ملازمین کے ساتھ برا سلوک کرے اپنے کاروبار کو تباہ بھی کرسکتے ہیں .
اپنے ملازمین کی ہرقسم کی کی گھریلو ضروریات اور پرسنل ریلیشنز وغیرہ کا خیال رکھیں کہ کہیں انہیں معاشرے میں کسی جگہ کوئی پریشانی تو نہیں‌کہ وہ اپنے کام کے علاوہ کسی اور چیز کی طرف توجہ دیں اور آپ کا بزنس فلاپ ہوجائے.

6:ملازمین پر بلا وجہ بوجھ نہ ڈالیں:
آپ کےکاروبار میں کام کرنے والے آپ کے نہ تو بچے ہیں اور نہ ہی ذر خرید غلام یا خادم، اگر آپ اُن کو بغیر کسی وجہ کے تنگ کرینگے، اُن پہ گالیاں نکالینگے، اُن پہ بلاوجہ جُرمانے لگاینگے تو جلد یا بہ دیر آپ بہت زیادہ خسارہ اُٹھاینگے.

7: کامیابی کے لیے محنت شرط ہے:
ہر کام میں کامیابی کے لیے محنت شرط ہے، اگر آپ محنت نہیں کرینگے یا کسی شارٹ کٹ کی تلاش میں رہیں گے تو آپ کبھی بھی کامیاب نہیں ہو سکتے، اس لیے جب آپ کسی کاروبار میں داخل ہوں تو یہ بات ذہن میں رکھیں کہ محنت آپ نے ضرور کرنی ہے اور وہ محنت بھی کافی کرنی ہوگی۔کیونکہ دنیا کا مشہور مقولہ ہے کہ” نامی کوئی بغیر مشقت نہیں‌ہوا”

8: آپ کے پاس آنے والاکسٹمر بادشاہ ہوتا ہے:
ایک کامیاب کاروباری کا یہ اُصول ہوتا ہے کہ وہ اپنے کسٹمر کو بادشاہ سمجھتا ہے، وہ اپنے کسٹمر کی رائے کو اہمیت دیتا ہے،ایک تحقیق کے مطابق ایک نئے کسٹمر، گاہک کو بنانے پہ 6 سے 7 گناہ زیادہ خرچہ آتا ہے بنسبت کسی پُرانے کسٹمر/گاہک کو اپنے پاس پکا رکھنے پے۔ اس لیے آپ کو چاہیے کہ اپنے نئے پُرانے گاہک کی طرف خصوصی توجہ دیں‌۔

9: اقربا پروری اور غیرضروری دوستی سے پرہیز کریں:
اقربا پروری کسی بھی کامیاب کاروبار کو نیچے لا سکتی ہے جبکہ کسی بھی نئے کاروبار کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دیتی اور اپنے دوست یا رشتہ دار کو کاروبار میں لانے سے بھی بہت ہی مشکل سے کامیابی حاصل ہوتی ہے جبکہ زیادہ تر حالات میں نہ صرف کاروبار کو نقصان پہنچتا ہے بلکہ اُس کے ساتھ ساتھ قیمتی رشتوں، ناتوں سے بھی بندہ محروم ہو جاتا ہے۔ اسی لیے بہتر ہے کہ آپ اپنے بزنس کو اِن چیزون سے پاک رکھیں۔
بقول کسی شاعر کے
ضرورت میں‌عزیزوں کی اگر کچھ کام آجائو
رقم بھی ڈوب جاتی ہے عداوت اور بڑھتی ہے

10: بروقت فیصلہ کرنا اور غلطیوں کو درست کرنا:
غلطی کرنا انسانی فطرت ہے لہذا آپکو چاہیے کہ اپنے غلط فیصلوں پے ڈٹے نہ رہیں‌بلکہ اُن کو دُرست کریں اور کوشش کرے کہ بروقت، صحیح فیصلہ کرے کیونکہ آپ کی بزنس کی کامیابی کا دارومدار اِن فیصلوں پر ہوتا ہے لہذا فیصلہ کرنا سیکھے اور ساتھ میں مشورہ کرنا نہ بھولیں۔اور ہر فیصلہ وقت کے پیش نظر کریں .

11: عجلت سے کام نہ لیں:
مشاہدے کی بات ہے کہ زیادہ تر کاروبارسے منسلک خاص کر نئے بزنس مین یا کاروبار والے ہر نئی آیڈیاء، کاروباری موقع پر پیسہ اور وقت لگاتے ہیں جس سے نہ صرف اُن کا قیمتی وقت ضائع ہوتا ہے بلکہ زیادہ تر اوقات میں اُن کا نئے کاروبار میں جانے کا فیصلہ غلط ثابت ہوتا ہے.اس لئے جو بھی کام کریں سوچ سمجھ کر کریں جلدی نہ کریں‌.

12: سوچوں میں مثبت رویوں‌کو اپنائیں:
ایسا بھی ہوسکتا ہے کہ آپ اپنا کاروبار اچھے بڑے انویسٹمنٹ سے شروع کرے مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ آپ اُس نئے کاروبار کو کسی پُرانے، کامیاب کاروبار کے برابر ٹھرایے اور اُسی حساب سے اپنے خرچے وغیرہ کریں، آپکو چاہیے کہ آپ کا بزنس خواہ کتنی بڑی انویسٹمنٹ سے شروع کیا گیا ہو آپ اپنے خرچے وغیرہ بہت کم رکھیں، اپنے بزنس کے ہر پہلو پر گہری نظر رکھیں، اپنی سوچ ایسی رکھیں کہ آپکا بزنس بہت مشکل سے شروع ہوا . اور آپ نے ہر قیمت پر اسے کامیاب کرنا ہے اور نقصان کی صورت میں آپ کی نظر بقیہ جمع شدہ رقم پر نہ ہو بلکہ یہ سوچیں کہ آپ کے پاس محدود وسائل ہیں۔

13: کاروباری کی منصوبہ بندی کریں مگرخیال رہے:
یہ بہت ضروری ہے کہ آپ کاروباری منصوبہ بندی کریں مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ آپ ہفتے، مہینے لگائیں بلکہ مناسب منصوبہ بندی کے ساتھ شروع کریں کیونکہ کامل منصوبہ بندی وجود نہیں رکھتی، منصوبہ بندی چاہے کتنی بھی بہترین ہو اس میں خامیاں، نقص، غلطیاں ضرور ہوتی ہیں جن کو آپ وقت کے سا تھ ساتھ اور تجربے کی بدولت ٹھیک کر سکتے ہیں لہذا مناسب منصوبہ بندی کے ساتھ شروع کریں اور پھر عملاََ میدان میں آکے سیکھے اورہمیشہ کاروبار کو بہتر سے بہترین کرنے کی کوشش کریں۔

14: قانون کو اچھی طرح‌پڑھیں۔:
قانون کو پڑھنے کا مطلب یہ نہیں کہ آپ قانون کی کوئی سند یا ڈگری حاصل کریں بلکہ آپ کو اپنے کاروبار سے متعلق سارے قوانین اور اصول وضوابط پر اچھی گرفت حاصل ہو، مثلا آپ کو بزنس کے رجسڑیشن، لایسینس، سیلز ٹیکس وغیرہ کا علم ہونا ضروری امر ہے، اس طرح آپکو قانون کی طرف سے کوئی مسئلہ درپیش نہیں ہوگا اور اگر بلفرض ہو بھی جائے تو آپ اُسے باآسانی حل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہوں۔

15: دنیا میں مختلف قسم کے لوگ ہیں۔۔!:
اگر آپ صاف سُتھرے، کھرے انسان ہیں تو اس کا یہ مطلب ہر گز نہیں کہ آپ کے ساتھ معاملات کرنے والا ہرشخص آپ ہی کی طرح‌صاف ستھر اور صاف گو ہے.، ہر اہم بات کو written میں لائیے اور قانون والوں کو اگر باوجود سب قانونی requirement پوری کرنے کے بھی آپ کے بزنس سےکوئی مسئلہ ہے تو مطلب یہ ہے کہ وہ مُٹھی گرم کروانا چاہتے ہیں آپ سے، لہذا آپ بھی زیادہ سمجھداری اور چالاکی دکھانے کی بجائے ان کی مٹھی میں‌کچھ دھر کے اپنا کام چلائیں.
16: بے کار لوگوں کو نظر انداز کریں!:
کاروباری زندگی میں‌آپ کا واسطہ کچھ ایسے لوگوں سے بھی پڑے گا جو آپ کے کاروبار پر خواہ مخواہ تنقید کریں گے، آپ کے حوصلے کو پست کرنے کی کوشش کرینگے، ایسے لوگوں سے بلکل کنارہ کشی کر لیں یا پھر کوشش کریں کہ آپ اُن سے بزنس سے متعلق باتیں شئر ہی نہ کریں کےاور ایسے لوگوں کی باتوں کو سنی ان سنی کرتے چلے جائیں۔

17: کام وقت پر کریں:
مطلب اگر کسٹمر کی طرف سے آپکو کوئی کام ملے تو اُسے جلدی پورا کریں کیونکہ پہلا تاثرہی آخری تاثر ہوتا ہے، تو اپنے پہلے تاثر کو بہترین بنائے تاکہ آپ اپنے کسٹمرز کا اعتماد حاصل کر سکیں اور اسے آئندہ اپنے پاس آنے پر مجبور کرسکیں۔

18:مشہور ضرب المثل ہے کہ “‌صبر کا پھل میٹھا ہوتا ہے”!:
جی بلکل آپ کسی بھی کاروبار میں بغیر صبر کے کھبی بھی کامیابی حاصل نہیں کر سکتے، اسی لیے صبر اور سخت محنت اور استقامت آپ کے بزنس کے لیے ایک ضروری امر ہے۔

19: مارکیٹ سے مقابلہ کریں!:
کھبی بھی اپنے کاروباری حریف کی بُرائیاں اپنے کسٹمر سے نہ کریں کیونکہ ایسی باتوں کا اثر ہمیشہ اُلٹا نکلتا ہے اور آپ بھی کسٹمر کی نذر میں گر جاتے ہیں۔کیونکہ غیبت ایک اچھی چیز نہیں‌ہے . لہذا ایسی باتوں سے اجتناب کریں۔ اور مقابلے سے نہ ڈریں کیونکہ مارکیٹ میں مقابلے کا مطلب ہوتا ہے کہ آپ کے پاس کمائی کرنے کے زیادہ مواقع ہیں تو بس ہوش اور ذہن سے کام لیتے ہوئے مقابلے کو جیتنے کی کوشش کریں۔اور کام کو نئے اوربہتر انداز سے کریں‌.یہی کام کی خوبی اور حسن ہے

20: تعلقات عامہ !:
اپنے کسی بھی گاہک کو نذر انداز نہ کریں، ہر گاہک سے تعلق بنائیے، اپنے گاہک سے پرسنل یا ذاتی لیول پے رابطہ رکھیں اس طرح‌آپ کا گاہک سے تعلق مضبوط سے مظبوط تر ہوتا جائے گا جونئے کسٹمر ز لانے کا سبب بنے گا اور مستقبل میں‌آپ کےلئے فائدہ مند ثابت ہوگا.

21:قرض کرنے میں‌احتیاط کریں!:
آج کے دور میں‌کوئی بھی کامیاب کاروبار قرض کے بغیر نہیں چل سکتا لہذا قرض کرنا، مارکیٹ میں پیسے لگانا وغیرہ آپ کے کاروبار کے کامیابی کے لیےاز ضروری ہے بس خیال رہے کہ آپ قرض اتنا کریں جتنا آپ کا کاروبار برداشت کرسکے اور قرض ڈوبنے بھی نہ پائے۔ یاد رکھئیے قرض کا ریکارڈ ضرور رکھیں ایسا ریکارڈ جس فریقین کو اعتماد ہو۔

22: پراڈکٹ کی پیکنگ:!
تیار شدہ مال ، سروس کی کمایابی میں presentation ، packing وغیرہ کا ایک اہم کردار ہے . لہذا اس پر بھی خصوصی توجہ دیں

23: اپنی سوشل زندگی سے دستبردارہوں!:
روز مرہ کی زندگی میں دوستیاں، رشتہ داریاں، یاریاں یہ سب ایک کامیاب کاروبار میں‌رکاوٹ پیدا کرسکتی ہیں، نئے قائم شدہ کاروبار میں‌یہ چیزیں‌کم سے کم ہونی چاہئیں. کیونکہ ان کا کاروبار کے نظام الااوقات پر گہرا اثرپڑتا ہے.
24. اللہ سے مانگیں.
ایک مسلمان ہونے کے ناطے انسان کو اپنی زندگی میں ہر قسم کا سوال صرف اپنے مالک سے کرنا چاہے . اس لئے کاروبار میں بھی اگر کوئی مشکل یا پریشانی کا سامنا ہوتو . اللہ تعالٰ سےدعائوں‌میں‌مانگیں‌.ان شا اللہ وہ ضرور حاجتیں پوری کرے گا.

25: ناکام ہونا زندگی کا حصہ ہے!:
سب کچھ کرنے کے باوجو د بھی اگر آپ کو ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے، کاروبار کامیاب نہ ہو، تو بہتر ہے کہ آپ کاروبار کو خیر باد کہ دیں. اگرچہ یہ بات کہنے کو آسان ہے مگر کرنے کو بہت مشکل ہے. لیکن کسی بھی کام کو باوجود بار بار کی ناکامی کے کرنا پاگل پن کے سواء کچھ نہیں اور ایسا کرنے سے آپ نہ صرف بہت زیادہ نقصان اُٹھاینگے بلکہ آپ کا قیمتی وقت بھی ضائع ہوگا۔ نہ صرف وقت ضائع ہوگا بلکہ آپ اپنی جمع پونجی سے بھی ہاتھ دھو بیٹھیں گے . اس لئے بہتر ہے کہ اس ناکامی کو خدا کی رضا سمجھ کر برداشت کرنا سکیھیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں